Durood e Taj Lyrics Translation & Transliteration

Translation of Durood e Tajj

O Allah, send blessings and Peace upon our Master and Patron Muhammad, The Owner of the Crown and the Ascent and the Buraq and the Standard, The Repeller of Affliction and Disease and Drought and Illness and Pain. His name is written on high, served and engraved in the Tablet and the Pen, The Leader of All, Arabs and non-Arabs, Whose body is sanctified, fragrant, and pure, Illumined in the House and the Haram, The Sun of Brightness, the Full Moon in Darkness, The Foremost One in the Highest Fields, the Light of Guidance, The Cave of Refuge for Mortals, the Lamp That Dispels the Night, The Best-Natured One, The Intercessor of Nations, The Owner of Munificence and Generosity. Allah is his Protector, Gabriel is his servant. The Buraq is his mount, the Ascent is his voyage, The Lote-Tree of the Furthermost Boundary is his station, Two Bow-Lengths or Nearer is his desire, His desire is his goal, and he has found his goal, The Master of the Messengers, the Seal of the Prophets, The intercessor of sinners, the friend of the strangers, The Mercy for the Worlds, The rest of those who burn with love, the goal of those who yearn, The sun of knowers, the lamp of travellers, The light of Those Brought Near, The friend of the poor and destitute, The master of Humans and Jinn, The Prophet of the Two Sanctuaries, The Imam of the Two Qiblas, Our Means in the Two Abodes, The Owner of Qaba Qawsayn, The Beloved of the Lord of the Two Easts and the Two Wests, The grandfather of al-Hasan and al-Husayn, Our patron and the patron of Humans and Jinn: Abu al-Qasim MUHAMMAD Son of `Abd Allah, A light from the light of Allah. O you who yearn for the light of his beauty, Send blessings and utmost greetings of peace Upon him and upon his Family.

Darood e Taj (Full)

Full Durood e Taj - Page# 1
Full Durood e Taj – Page# 1
Full Durood e Taj - Page# 2
Full Durood e Taj – Page# 2
Full Durood e Taj - Page# 3
Full Durood e Taj – Page# 3

Durood Taj in Arabic Text / Arabic Script

اَللّهُمَّ صَلِّ عَلٰى سَيّدِنا وَمَولانَا مُحَمَّدٍ صَاحِبِ التَّاج وَالْمِعرَاج وَالْبُراق وَالعَلَمْ دَافِع البَلاءِ وَالوَبَاءِ وَالقَحطِ وَالمَرَض ِ وَاَلَم​ اِسمُه مَكتُوبٌ مَرفوعٌ مَشفُوعٌ مَنقُوشٌ في اللَّوحِ وَالقَلَم سَيِّد العَربِ وَ العَجَم جِسمُه مُقَدسٌ مُعَطَرٌ مُطَهَّرٌ مُنورٌ في البَيت ِ وَالحَرَم​ شَمسِ الضُحٰى بَدرِ الدُّجٰى صَدر العُلٰى نُور ِ الهُدٰى​ كَهفِ الوَرٰى مِصْبَاحِ الظُّلَم جَميلِ الشِّيَم شَفيع ِ الاُمَم​ صَاحِبِ الجُودِ وَالكَرَم وَالله عَاصِمُهُ وَجبريلُ خَادِمُه والبُراقُ مَركَبَه​ وَلمعَراجُ سَفَره وَسِدرَةُ المُنتهٰى مَقامُه وَقابَ قَوسَينِ مَطلُوبُه​ وَالمَطلُوبُ مَقصُودُه وَالمَقصُودُ مَوجُودُه سَيّد ِ المُرسَلينَ ​ خَاتَم النَبيّنَ شَفيع المُذنِبينَ اَنيس ِ الغَريْبينَ رَحمَةٍ لِّلعٰالَمينَ رَاحَة ِ العَاشِقينَ مُرَادِ المُشتاقينَ شَمس العَارِفينَ سِراجِ السَّالِكينَ​ مِصباح المُقرَّبينَ مُحبِّ الفُقرآءِ والغُرَباءِ والمَسَاكينَ سَيّد الثَّقَلين نَبّي الحَرَمَين اِمام القِبلتَين​ وَسيلَتَنا في الدَّارَين صَاحِبِ قابَ قَوسَين مَحبُوب رَبِّ المَشرقَين وَ رَبّ ِ المَغربَين​ جَدّ ِ الحَسَنِ وَ الحُسَين مَولانا وَمولى الثَقَلين اَبي القَاسِمِ مُحَمَدِ بن عَبدِ الله نُور مّن نُور ِ الله​ ِياايُها المُشتَاقُونَ بنُورِ جَمَاله ِ صَلُّوا عَليه وآله وَ سَلّمُو ا تَسليما۔

Transliteration of Darood e Taj

ALLAHUMMA SALLI ALA SAYYIDINA WA MAULANA MUHAMMADIN SAAHIBIT TAAJI WAL MI’RAAJI WAL BURAAQI WAL ALAM. DAA FI’IL BALAAA’I WAL WABAAA’I WAL QAHTI WAL MARADI WAL ALAM. ISMUHU MAKTUBUN MARFU’UN MASHFU’UN MANQUSHUN FIL LAWHI WAL QALAM. SAYYIDIL ARABI WAL AJAM. JISMUHU MUQADDASUN MU’ATTARUN MUTAHHARUN MUNAWWARUN FIL BAYTI WAL HARAM. SHAMSUD DUHAA BADRIT TUJAA SADRIL ULA NURRIL HUDA KHAFIL WARA MISBAAHIZ ZULAM. JAMILISH SHIYAMI SHAFI’IL UMAM. SAAHIBIL JUDI WAL KARAM. WAL LAAHU AASIMUHU WA JIBREELU KHAADIMUHU WAL BURAAQU MARKABUHU WAL MI’RAAJU SAFARUHU WA SIDRATUL MUNTAHA MAQAAMUHU WA QAABA QAWSAYNI MATLUBUHU WAL MATLUBU MAQSUDUHU WAL MAQSUDU MAWJUDUHU SAYYIDIL MURSALEENA KHA TAMIN NABIYYINA SHAFI’IL MUZ NABINA ANEESIL GHARIBEENA RAHMATIL LIL AALAMEENA RAAHATIL AASHIQEENA MURAADIL MUSHTAAQEENA SHAMSIL AARIFINA SIRAAJIS SAALIQEENA MISBAHIL MUQAR RABINA MUHIBBIL FUQARAAA’I WAL GHURABAAA’I WAL MASAAKINA SAYYIDIS SAQALAINI NABIYYIL HARAMAINI IMAAMAL QIBLATAYNI WASILATINA FID DAARAINI SAAHIBI QABAA QAWSAYNI MAHBOOBI RABBIL MASHRIQAYNI WA RABBIL MAGHRIBAYNI JADDIL HASSANI WAL HUSSAINI MAULANA WA MAULAS SAQALAYNI ABIL QAASIMI MUHAMMADINIBNI ADBILAAHI NURUM MIN NURIL LAAHI YAAA AYYUHAL MUSHTAAQUNA BI NURI JAMAALIHI SALLU ALAIHI WA AALIHI WA ASHABIHI WASALLIMU TASLIMAN.

Benefits of Durood-e-Taj

If anyone wants to see Sayyiduna Rasoolullah (Sallal Laahu Alaihi Wasallim) in his dream, then he should recite Durood-e-Taaj on eleven Friday nights continuously and that too on the advancing stages of the moon. The pre-requisites of the Revision of the Durood are as below:

a. Make Wudhu.
b. Put on clean scentful clothes.
c. Face the Qibla and recite Durood for 170 times, then go to bed.

For the sanctity of the soul, one should recite the Durood seven times after Salaatul Fajr, three times after Salaatul Asr and Esha, each day.

And for overcoming the cruel Rulers and enemies, and to come out of the misery of poverty, one should recite Durood for 40 days continuously, 41 times each day. One who wishes to enhance the avenues of economy in abundance, he or she must make it a routine to revise the Durood seven times each day after Salatul Fajr.

Besides all this, Durood-e-Taaj is panacea of all the present day ills and will enable the reciter to pass a happy and peaceful life for ever.

Translation of Darood e Taj in Urdu

درودِ تاج، منظوم ترجمہ اور تضمین

اَللّهُمَّ صَلِّ عَلٰى سَيّدِنا وَمَولانَا مُحَمَّدٍ صَاحِبِ التَّاج وَالْمِعرَاج وَالْبُراق وَالعَلَمْ دَافِع البَلاءِ وَالوَبَاءِ وَالقَحطِ وَالمَرَض ِ وَاَلَم
حمد اس ذات کو جو ہے سارے جہانوں کا معبود و خالق حکیم الحِکم
اُس کے محبوب کی ذات پر ہے لِکھا ایک عاشق نےصَلْوَۃِ ذِی المحترم
اُس درودِ حسیں کا ہے یہ ترجمہ اِس کی تظمین کو میں اُٹھاؤں قلم
صاحبِ تاج وہ،شاہِ معراج وہ شہسوارِ براق و امیرِ عَلَم،
دافعِ ہر بلا،دافعِ ہر وبادافعِ قحط وامراض و رنج و الم

اِسمُه مَكتُوبٌ مَرفوعٌ مَشفُوعٌ مَنقُوشٌ في اللَّوحِ وَالقَلَم
اسم سب سے حسیں، اسم سب سے جُدا، اسم تو باعثِ فضل و رحمت بھی ہے
اسم وہ خود خدا پاک نے جو چُنا، اسم تو مغفرت کی ضمانت بھی ہے
اسم تعریف بھی اسم توصیف بھی اسم ذکر و ثناء اسم مدحت بھی ہے
اسم لکھا گیا، اسم اونچا ہوا، اسم مُہرِ قبولِ شفاعت بھی ہے
اسم کی برکتیں، اسم کی رونقیں، اسم لوح و قلم کی امانت بھی ہے

سَيِّد العَربِ وَ العَجَم جِسمُه مُقَدسٌ مُعَطَرٌ مُطَهَّرٌ مُنورٌ في البَيت ِ وَالحَرَم
کیا نبی کیا ولی سب کے دلدار ہیں سب کے دلدار کا ہے مقدس بدن
کیا بشر کیا مَلَک سب کے غمخوار ہیں سب کے غمخوار کا ہے مقدس بدن
کیا چرند کیا پرند سب کے منٹھار ہیں سب کے منٹھار کا ہے مقدس بدن
کیاعرب کیاعجم سب کے سردار ہیں،سب کے سردار کاہے مقدس بدن
حرم و کعبہ کو وہ جو منور کرے،وہ مہکتی وہ پاکیزاسی اک کرن

شَمسِ الضُحٰى بَدرِ الدُّجٰى صَدر العُلٰى نُور ِ الهُدٰى
آپ نورِ مُبیں آپ بدرِ مُنیر ، بیقراروں کو برکت کا ماہتاب ہیں
آپ سے روشنی چاند تاروں میں ہے، آپ چرخِ رسالت کا ماہتاب ہیں
عرش سے فرش تک جو ریاست سجی آپ ہی اُس ریاست کا ماہتاب ہیں
چاشت گاہوں کاسورج وجود اپکا،آپ ہر شب کی ظلمت کا ماہتاب ہیں
صدر بزمِ بلندی و رفعت کے ہیں،راہ گزارِ ہدایت کے ماہتاب ہیں

كَهفِ الوَرٰى مِصْبَاحِ الظُّلَم جَميلِ الشِّيَم شَفيع ِ الاُمَم
وہ ہیں جانِ سُخن وہ ہیں جانِ بیاں وہ فصاحت کی بارش وہ ابرِ بَلاغ
وہ غُلاموں پہ آسان جنت کریں، عافیت کی عطا کردیں راہ و سُراغ
اُن کی توصیف کا حق ادا ہم کریں کیا ہماری بساط و مجال و مَساغ
ساری مخلوق کی ہیں وہ جائے اماں،ساری تاریکیوں کے وہ روشن چراغ
نیک طینت ہیں وہ،نیک اطوار ہیں ان کے ہاتھوں میں ہیں بخششوں کے ایاغ

صَاحِبِ الجُودِ وَالكَرَم وَالله عَاصِمُهُ وَجبريلُ خَادِمُه والبُراقُ مَركَبَه
آپ جنت کے مالک ہیں قاسم بھی ہیں ، یہ فلَک آپ کا ہے زمیں آپ کی
چاند جیسا کَہیں یہ مُناسب نہیں ، چاند سے بڑھ کے روشن جَبیں آپ کی
آپ ہیں لاجواب آپ ہیں بے نظیر باخدا ہے مثال نہیں آپ کی
سَر سے پیروں تلک وہ کرم ہی کرم،رب حفاظت کرے بالیقیں آپ کی،
اُن کے خدمت گزاروں میں جبریل ہے،اور سُواری براقِ حسیں آپ کی

وَلمعَراجُ سَفَره وَسِدرَةُ المُنتهٰى مَقامُه وَقابَ قَوسَينِ مَطلُوبُه
ساری دنیا کا اُنکو دیا انتظام ، ساری دنیا میں قائم نظام اُن کا ہے
سارے عالَم پہ رحمت لُٹاتے ہیں وہ، سارے عالَم پہ فیضان عام اُن کا ہے
مالکِ جانِ مؤمن بنایا اُنہیں، عاشقوں کے دلوں میں قیام اُن کا ہے
سفر اُنکا ہے معراج اور سدرۃ المنتہٰی مستقر اور مقام اُن کا ہے
قاب قوسین کا مرتبہ اُنکا مطلوب ہے اور دارالسّلام اُن کا ہے

وَالمَطلُوبُ مَقصُودُه وَالمَقصُودُ مَوجُودُه سَيّد ِ المُرسَلينَ
آپ حامد ہیں احمد ہیں جوّاد ہیں آپ کا اِک حسیں نام محمود ہے
دَیں شہادت نبوت کی سنگ و شجر، آپ کا صرف اللہ مشہود ہے
سجدہ گاہِ حرم ہے وجود آپ کا، آپ کا صرف اللہ مسجود ہے
اور مطلوب ہی اُن کا مقصود ہے اور مقصود ہی اُن کا موجود ہے،،
آپ سارے رسولوں کے سردار ہیں،آپ کا صرف اللہ معبود ہے

خَاتَم النَبيّنَ شَفيع المُذنِبينَ اَنيس ِ الغَريْبينَ رَحمًةٍ لِّلعٰالَمينَ
ذرّے بن جاتے ہیں مہروماہ نور کے،، چُوم لیتے ہیں جو اُن کی پیزار کو
اُن کی رحمت ہے یکساں سبھی کے لئے ، وہ نِبھاتے ہیں ہر نیک و بدکار کو
سب سے اوّل بھی وہ سب سے آخر بھی وہ،، رب نے منصب دیا ایسا سرکار کو
بعدمیں سارے نبیوں کے آئے ہیں وہ،بخشوائیں گے ہر اِک گناہگار کو
ہر مسافر کی کرتے ہیں غمخواریاں،رحمتیں بانٹتے ہیں وہ سنسار کو

رَاحَة ِ العَاشِقينَ مُرَادِ المُشتاقينَ شَمس العَارِفينَ سِراجِ السَّالِكينَ
بن کے آئے اُجالا جہاں کے لئے اور مِٹا کر چلے دہَر کی تیرگی
جام محشر میں کوثر کا کر کے عطا دُور کردینگے ہر اِک کی وہ تشنگی
اپنی اُمّت کی خاطر فکرمند ہیں، ہر نبی چاہتا ہے بنے اُمّتی
عاشقوں کے دلوں کی وہ تسکین ہیں،اورمُرادِ ہر اِک صاحبِ شوق کی،
حق شناسوں کےخورشید وخاور ہیں وہ،سالِکینِ رہِ عشق کی روشنی

مِصباح المُقرَّبينَ مُحبِّ الفُقرآءِ والغُرَباءِ والمَسَاكينَ سَيّد الثَّقَلين نَبّي الحَرَمَين اِمام القِبلتَين
مشکلوں میں گرِفتار ہو کر اُ نہیں ، غم کے مارے کبھی جو دوہائی کریں،،
نفع دیتے ہیں وہ کیونکہ نافع ہیں وہ، اور ہر ِاک کی مُشکل کُشائی کریں،،
دور کرتے ہیں بیماروں سے ہر مَرَض اور دشمن سے بھی وہ بھلائی کریں
پیار محتاج ومفلس سے مسکین سے،ہر مقرب کی وہ رہنمائی کریں،،
جن و انساں کے سرادر دونوں حرم دونوں قبلوں کی وہ پیشوائی کریں

وَسيلَتَنا في الدَّارَين صَاحِبِ قابَ قَوسَين مَحبُوب رَبِّ المَشرقَين وَ رَبّ ِ المَغربَين
مقتدی ہر نبی اُن کا کہلاتا ہے اور وُہی ہیں اِمامِ صَفِ انبیا
ہر صحیفہِ سابق میں ذکر اُن کا ہے، ہر زباں پر اُنہی کی ہے مدح و ثنا
تھے وسیلہ وُہی آدمِ پاک کا اور خلیلِ خدا کی وہی ہیں دُعا
دنیا اورآخرت کا وسیلہ ہیں وہ ، رتبہِ قابَ قوسین جن کو مِلا،،
دونوں ہی مشرقوں مغربوں کا وہ رب،حاصل اُن کو خطاب اُسکے محبوب کا

جَدّ ِ الحَسَنِ وَ الحُسَين مَولانا وَمولى الثَقَلين اَبي القَاسِمِ مُحَمَدِ بن عَبدِ الله نُور مّن نُور ِ الله
وہ عطاؤں کی بارش کرم کا سحاب برکت و رحمتِ کُل زمانہ ہیں وہ
وہ ابو بکر و فاروق کے دل کا چین اور عثماں کے لب کا ترانہ ہیں وہ
اُن کے داماد کا ہے لقب بو تُراب اور خاتونِ جنت کے بابا ہیں وہ
جدِّ امجد ہیں حسنین کے اورہر جن و انساں کے آقاو مولٰی ہیں وہ ،
باپ قاسم کے بیٹے ہیں عبداللہ کے اور نورِ الہٰی کا حصّہ ہیں وہ

ياايُها المُشتَاقُونَ بنُورِ جَمَاله ِ صَلُّوا عَليه وآله وَ سَلّمُو ا تَسليما۔
اے نثارانِ فضل و کمالِ نبی،، آپ پر آل و اصحاب پر صبح و شام،،،
اے گدایانِ جود و نوالِ نبی،، آپ پر آل و اصحاب پر صبح و شام،،،
اے مُحِبّانِ اصحاب و آلِ نبی،، آپ پر آل و اصحاب پر صبح و شام،،،
اے فدایانِ نورِ جمالِ نبی، آپ پر آل و اصحاب پر صبح و شام،،،
جیسے حق بھیجنے کا ہے بھیجو بصد احترام و محبت درود و سلام

Leave a Reply

Send this to a friend